جگنو انٹر نیشنل کی چھٹی سالگرہ

ماہانہ مشاعرہ بزمِ چغتائی
November 4, 2020
علامہ اقبال نے قرآن کا پیغام اپنی شاعری میں دنیا تک پہنچایا
November 7, 2020

جگنو انٹر نیشنل کی چھٹی سالگرہ

شیراز انجم، لاہور
علمی،ادبی،سماجی اور ثقافتی تنظیم جگنو انٹرنیشنل کی چھٹی سالگرہ،یوم ِ یک جہتی¾ کشمیر کے حوالہ سے ریلی، ادبی و علمی سہ ماہی جریدہ جگنو انٹرنیشنل اور روزنامہ مصافحہ کے ادبی ایڈیشن کا تعارفی پروگرام اور چیف ایگزیکٹو جگنو انٹرنیشنل محترمہ ایم زیڈ کنول کی شاعری کی نئی کتاب ” اب اشک بار ہے لالہ”کی پذیرائی کے حوالہ سے الحمرا آرٹس کونسل کے اشتراک سے الحمرا آرٹس کونسل ،مال روڈ لاہور کی ادبی بیٹھک میں ایک شاندار پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ بعد ازاں ادبی بیٹھک الحمرا ہال میں جگنو انٹرنیشنل کی چھٹی سالگرہ، ”اب اشک بار ہے لالہ” کی پذیرائی,”ادبی جریدہ سہ ماہی جگنو انٹرنیشنل” اور ”روزنامہ مصافحہ ”کے ادبی ایڈیشن کی تعارفی تقریب کا آغاز ایم طفیل اعظمی کی تلاوت قرآن پاک سے ہوا۔اس کے بعد ڈاکٹر حیدری بابا نے حمد باری تعالیٰ اور زین ساقیبی نے نعت رسول پاک سے حاضرین پر ایک وجد کی کفیت طاری کی۔پروگرام کی صدارت جناب ڈاکٹر سعادت سعید نے کی۔مہمانانِ خصوصی روزنامہ مصافحہ کے چیف ایڈیٹر جناب را¶ رفیق احمد، امریکہ میں پنج ریڈیو کی چیف ایگزیکٹومحترمہ الماس شبی تھے۔مہمانان اعزاز میں ایڈیٹر روز نامہ اوصاف جناب سرفراز سید،میانوالی سے جگنو کوآرڈینیٹرجناب صداقت نقوی او رمعروف مصورو ناول نگارجناب ریاض احمد تھے۔حاصل پور سے محترمہ ایم زیڈ کنول کی بڑی بہن محترمہ زمرد تسنیم نے پروگرام میں خاص طورپر شمولیت فرمائی۔پروگرام کی نظامت چیف ایگزیکٹو جگنو محترمہ ایم زیڈ کنول اور ایم شیراز انجم نے کی۔محترمہ ایم زیڈ کنول نے اپنی شاعری اور جگنو کی تاریخی سفر کے حوالہ سے اپنی دلنشیں آواز سے حاضرین پر ایک سحر طاری کئے رکھا۔۔ انہوں نے اپنی شاندار شاعری سے ماحول کو وجد آفریں بنائے رکھا۔ صدر جگنو انٹرنیشنل شگفتہ غزل ہاشمی نے بھر پوراندازمیں جگنو کے حوالہ سے تعارف پیش کیا۔اپنی شاندار نظم بھی پیش کی اور جگنو کنول سے اپنی محبتوں کا اعادہ کیا۔ایم شیراز انجم نے پہلے احباب کی آمد پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہوے چیف ایگزیکٹو جگنو انٹرنیشنل کی علمی ادبی خدمات پر ان کی نئی کتاب”اب اشک بار ہے لالہ اور دیگر کتابوں پر سیر حاصل تبصرہ کیااور جگنو انٹرنیشنل پر اپنا مقالہ بھی پیش کیا۔جناب بابر ہاشمی،جواد احمد راسخ اور سید فراست بخاری نے جگنو انٹرنیشنل اور اس کی روح رواں محترمہ ایم زیڈ کنول کی ادبی مقام پر اپنی خوبصورت نظم پڑھی۔ ڈاکٹر کنول فیروز، جناب سید حسنین بخاری،صباءممتاز بانو،اعجاز اللہ ناز، ظل ِہما نقوی،،سمیرابتول،کامران نذیر،سید فردوس نقوی،صفیہ صابری ملک،زاہد وارثی (پاک پتن)مصطفیٰ،سہیل یار،اقبال کیفی،صادق (قصور) اورلیلیٰ رانانے جگنو انٹرنیشنل کی ادبی خدمات پرخراجِ تحسین پیش کیا۔ڈاکٹر ایم ابراراوریاسر شمعون نے جگنو انٹرنیشنل کی کارکردگی اور ایم زیڈ کنول کی کاوشوں پر سیر حاصل گفتگو کر کے انہیں زبردست خراجِ تحسین پیش کیا۔سالگرہ کے حوالے سے یہ بہت بھر پور پروگرام تھا۔ نابینا بچے حارث عثمان جو اپنی والدہ کے ساتھ آئے تھے کلام اقبال سنایا۔ عدنان لطیف نے بانسری پر ترانہ سنایا۔۔حفظ مراتب کے مطابق سٹیج پر موجود مہمانان گرامی نے پروگرام کی آخری نشست میں جگنو کے حوالہ سے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔جناب سرفراز سید نے جگنو انٹرنیشنل اور اس کی سربراہ ایم زیڈ کنول کی علم دوستی پر روشنی ڈالی اور انہیںخراج تحسین پیش کیا۔جناب راو¿ رفیق احمد نے جگنو خاندان سے اپنی محبت کا اظہار کرتے ہوے اپنے اخبار کی خدمات پیش کیں۔ محترمہ الماس شبی نے پنج ریڈیو امریکہ پر جگنو۔ کنول کے مشاعروں کے ساتھ ساتھ ریڈیو کی ادبی خدمات سے حاضرین کو محفوظ کیا۔جناب صداقت نقوی نے جگنو پر سرائیکی دوہڑے سنائے۔اپنے صدارتی خطبہ میں ڈاکٹر جناب سعادت سعید نے کہا کشمیر نے انشاءاللہ جلد آزاد ہونا ہے۔ برصغیر میں مسلمان حکومت زیادہ رہی اور مسلمانوں نے ہی امن و آشتی کا علم ہمیشہ بلند رکھا۔ جگنو انٹرنیشنل کی پوری ٹیم اپنی چیف کنول کے ہمراہ ادبی اور علمی خدمات کے ساتھ ملکی سالمیت کا پرچم اٹھائے اگے بڑھ رہی ہے۔ جگنو سربراہ اور جگنو احباب کشمیر سے اپنی محبت کا ہر دور میں اعلان کرتے آئے ہیں۔انہوں نے جگنو چیف کی علمی ادبی سماجی و ثقافتی خدمات پر زبردست خراج تحسین پیش کیا۔دیگر احباب نے بھی ایم زیڈ کنول کے فن اور شخصیت کے حوالے سے بہت خوبصورت گفتگو کی اور ان کی ادبی خدمات کو سنگِ میل قرار دیا۔ایم شیراز انجم نے دعا کے ساتھ پروگرام کا اختتام کیا۔جگنو انتطامیہ نے سالگرہ کا بھر پور انتظام کیا۔الماس شبی (امریکہ) شگفتہ غزل ہاشمی،مقصود چغتائی، علی عمران (گھر فاونڈیشن)، صداقت نقوی، فردوس نقوی،سمیرا بتول نے ایم زیڈ کنول کو پھول پیش کئے۔ صد ر ِتقریب، مہمانانِ خصوصی کو بھی پھول پیش کر کے ان کا استقبال کیا گیا۔آخر میں سالگرہ را¶ قاسم علی شہزاد (جگنو) اور جگنو انٹر نیشنل کی چھٹی سالگرہ کا کیک کاٹا گیا۔ یہاں بھی احباب کی محبتیں دکھائی دیں۔ فردوس نقوی (تین کیک) اس کے علاوہ شگفتہ غزل ہاشمی اور شیراز انجم بھی کیک لائے تھے۔ جگنو چیف کنول نے احباب کی ہمراہی میں کیک کاٹا۔ بعد ازاں حسبِ روایت تواضع کے ساتھ اس شاندار پروگرام کا اختتام ہوا۔